مریم نواز نے 2024 کے بجٹ میں کسانوں کی فلاح و بہبود کے لیے کیے جانے والے اقدامات کی تعریف کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ حکومت نے کسانوں کے مسائل کو مدنظر رکھتے ہوئے کئی اہم اقدامات اٹھائے ہیں جو کہ زراعت کے شعبے کی ترقی کے لیے ضروری ہیں۔

مریم نواز کی باتوں کے چند اہم نکات:

  1. کسان پیکج:
    • مریم نواز نے بجٹ میں کسان پیکج کے اعلان کو سراہا، جس میں کھاد، بیج اور دیگر زرعی ضروریات پر سبسڈی فراہم کرنے کا ذکر کیا گیا ہے۔
  2. زرعی قرضے:
    • انہوں نے زرعی قرضوں کی فراہمی کے لیے مختص کی جانے والی رقم میں اضافے کو خوش آئند قرار دیا اور کہا کہ یہ اقدام کسانوں کی مالی مشکلات کو کم کرنے میں مددگار ثابت ہوگا۔
  3. جدید زرعی ٹیکنالوجی:
    • مریم نواز نے جدید زرعی ٹیکنالوجی کے استعمال کو فروغ دینے کے لیے بجٹ میں مختص کی گئی رقم کو بھی سراہا اور کہا کہ اس سے پیداوار میں اضافہ ہوگا اور کسانوں کی آمدنی میں بہتری آئے گی۔
  4. آبپاشی کے منصوبے:
    • انہوں نے آبپاشی کے نظام کو بہتر بنانے کے لیے بجٹ میں شامل کیے گئے منصوبوں کی تعریف کی اور کہا کہ ان منصوبوں سے پانی کی قلت کے مسائل حل ہوں گے۔
  5. کسانوں کی تربیت:
    • مریم نواز نے کسانوں کی تربیت اور تعلیم کے پروگراموں کو بھی اہم قرار دیا اور کہا کہ ان پروگراموں سے کسانوں کو جدید تکنیکوں سے آگاہی حاصل ہوگی۔

مریم نواز کا کہنا ہے کہ یہ بجٹ کسانوں کے مسائل کے حل اور زرعی شعبے کی ترقی کے لئے ایک مثبت قدم ہے اور حکومت کو اس پر مکمل عمل درآمد کو یقینی بنانا چاہیے۔